عام افراد کو دستیاب تصریحات کی عالمگیر دستیابی

June 16, 2020

ہم نے اکاؤنٹنگ اور کو الٹی کو بہتر بنانے کے لئے تصریحات کی اصطلاح سن رکھی ہے۔ تصریحات
کو باضابطہ کمیٹیاں تشکیل دیتی ہیں جن میں دلچسپی رکھنے والےتمام فریقین حصہ لیتے ہیں اور باہمی
اتفاق کی بنیاد پر ان کی تشکیل ہو تی ہے۔تاہم عام افراد کو دستیاب تصریحات کسی مخصوص ادارے
کی ملکیت ہوں یا نہ ہوں تمام لو گوں کو یکساں مواقع ،بغیر اخراجات اور کسی با ضابطہ کارروائی
کے نئے کام کے آغاز کا موقع فراہم کرتے ہیں ۔مزید برآں یہ آپ کی ویب سائٹ کی باسہولت رسائی
اور مواد کی تلاش کو دنیا کے گوشے گوشے سے ممکن بناتے ہیں ۔ ان تصریحات کو آزادانہ طور پر
اپنایا جا سکتا ہے, بآسانی نافذ کیا جا سکتا ہے,یہ عوام الناس کوبلا قیمت دستیاب ہیں اور ان کی سخت
نگرانی نہیں کی جا تی۔ ا ن تصریحات کی تین امتیازی خصوصیات میں عام فہم ، قابل نفاذ اور بلا اضافی
اخراجات استعمال کی سہولت ہے۔
یہ تصریحات اس وقت وجود میں آتی ہیں جب ٹیکنالوجی اور اس کے نفاذ میں اضافے کے باعث مقابلہ
اس قدر بڑھ جاتا ہےکہ لوگ بآسانی تقلید کرتے ہیں ۔ملکیتی تصریحات کے مقابلے میں عام لوگوں کو
دستیاب تصریحات کم خرچ بالا نشین ہیں ۔جو آزادانہ تبادلہ خیال کو یقینی بناتے ہیں ۔بالخصوص اعلیٰ
سطح پر فیصلہ سازی کی بنیاد معلومات و اطلاعات کے آزادنہ تبادلے پر منحصر ہے ۔
ان تصریحات کے باعث آپ معلومات کی تخلیق سے سالہا سال بعد انہیں بازیافت کر سکتے ہیں ۔مزید
برآں حکومتوں کے مابین اور حکومتوں ا ورشہریوں کے مابین ربط سے معلومات کا ذخیرہ بنتا ہےجس
پر ملکیتی اختیارات لاگو نہیں کئے جا سکتے ۔بہت ساری معروف تنظیمیں جیسے Redhat Linux ان
تصریحات کی حامی ہیں کیونکہ یہ تصریحات منظم تنظیمیں تشکیل دیتی ہیں اور انہیں کئی تنظیمیں بعد
میں اپنا لیتی ہیں ان تصریحات کی عام مثالوں میں TCP/IP,OSI MODEL,NIST,IEEE,HTML
اور XML شامل ہیں ۔جن کے تحت خطرات کو بھانپنے سے لے کر معلومات کی حفاظت اور خصوصیات
کی بہتری شامل ہیں ۔
ان تصریحات کی اصطلاح سے ان کے استعمال اور معلومات کی حفاظت پر سوالیہ نشان دکھائی دیتا
ہے۔تاہم یہ تاثرحقیقت سے بالکل برعکس ہے کیونکہ یہ معلومات کی حفاظت پر مرکوزپر بنائے گئے
ہیں ۔
انٹرنیٹ سب کے لئے ہے۔
یہ انٹر نیٹ سوسائٹی کا اولین مقصد ہے حالانکہ آدھی دنیا اب تک انٹر نیٹ کا استعمال نہیں کر رہی
۔جو اس کا استعمال جانتے بھی ہیں وہ بھی اس کے نئے مسائل کے باعث اس کا بھرپور فائدہ اٹھانے
کے قابل نہیں ۔جوں جوں مزید لوگ اس کے استعمال سے واقف ہوتے جا رہے ہیں ان کے لئے اس کے
مثبت اور منفی پہلوؤں کا علم نہایت اہمیت کا حامل ہے۔ہمارا اس بات پر کامل یقین ہے کہ انٹر نیٹ کو
سب کے لئے یکساں محفوظ اور قابل بھروسہ ہونا چاہیے۔
ایسا تب ہی ممکن ہے جب تصریحات اور اصولوں کے تحت نیٹ ورک کے ایک حصے سے دوسرے
تک عالمگیر رسائی دستیاب ہو ۔کوئی بھی نظام انٹرنیٹ جیسا وسیع اور منتوع نہیں ۔لہذٰا انٹرنیٹ پر
بھروسہ کو ممکنہ خطرات سے پاک کرنے اور اس کی کارکردگی پر بہترین اعتماد کے لئے سرزنش
کی گنجائش اور بدلتے وقت کے ساتھ تبدیلی اور لچک کی ضرورت ہے۔
2020 کے اختتام تک انٹر نیٹ سوسائٹی TLS,DNS SEC;IVP اور HTTP-2 کے استعمال سے
ویب سرورز کو محفوظ کرنے اور ان کی ہمہ وقت دستیا بی کے لئے کوشاں ہے ۔
تصریحات کے استعمال سے کیا آپ کو معلوم ہے کہ آپ اپنی ویب سائٹ کو دنیا
کے کونے کونے میں تما م اقسام کے صارفین کو مہیا کر سکتے ہیں ؟
تو سنیئےکہ یہ سب IETF کے جدید اور محفوظ ترین اصولوں سے عین ممکن ہے۔بہت سے ویب سرور
منتظمین کی یہ خواہش ہے کہ وہ اپنے سرورز کو محفوظ بنانے کے لئے ان کا استعمال کریں مگر شاید
انہیں معلوم نہ ہو اور نہ ہی کبھی انہیں جاننے کی فرصت نصیب ہوئی ہو یا ایسا بھی ہو سکتا ہے کہ وہ
تصریحات سے ناواقف ہوں یا ان کے پاس ان تصریحات کی حمایت میں کوئی ٹھوس دلیل نہ ہو۔
اس مہم کے مقاصد مندرجہ ذیل ہیں :
▪ متعلقہ ویب سرور کا ایک گروپ تشکیل دیا جائے جو CDN یا اس کے بغیر apache اور ngix کی بہترین سروسز فراہم کریں۔دو سرورز ورچوئل مشین پر بنائے گئےہیں۔
▪ اس ضمن میں بنیادی طریقہ کار کی دستاویزات سازی کی جائے جن میں ان تصریحات کا نفاذ
اور اس سے حاصل ہونے والے ثمرات کا احاطہ کیا جائے۔
▪ ویب سائٹ منتظمین میں متعلقہ مواد کی تشہیر کی جائے تاکہ انہیں ان تصریحات کی اہمیت کا
بخوبی اندازہ ہو۔
▪ اس ضمن میں انٹرنیٹ سوسائٹی کے زیر انتظام ویب سائٹس پر ان تصریحات کا استعمال کر کے
عملی مثال قائم کی جائے۔
چنانچہ Internet.nl کے ٹیسٹوں کا استعمال کیا گیا ہے ۔
12 فروری 2020 تک دو سرورز پر 100 فیصد اہداف اور دو سرورز پر 97 فیصد اہداف حاصل کئے
جا چکے ہیں اور مزید کوشیشیں جاری ہیں۔تمام سرورز HTTP-2 کی تائید کرتے ہیں ۔آئندہ برس
انٹرنیٹ سوسائٹی میل سرور، ٹائم سرور اور کمیونیکیشن سرورز کو محفوظ بنانا چاہتی ہے ۔
یورپین ممالک میں عام لوگوں کے زیر استعمال تصریحات پر تیزی سے کام جاری ہے۔تاہم ایشیائی
خطے میں ابھی اس کا آغاز ہوا ہے ۔دو اہم ممالک پاکستان اور بھارت نے اب اپنی عوام کو اس اصطلاح
سے متعارف کروایا ہے۔بھارت ان تصریحات کی تعریف یوں بیان کرتا ہے کہ یہ وہ تصریحات ہیں
جنہیں غیر منافع بخش تنظیمیں اپناتی اور برقرار رکھتی ہیں ۔اور اس میں دلچسپی رکھنے والےتمام
فریقین کاغیر جانبدارانہ اشتراک شامل ہوتا ہے۔
پاکستان نے 2018 میں ڈیجیٹل پاکستان پالیسی بنائی ہے جس کےتحت حکومت پاکستان مختلف ٹیکنالوجیز
جن میں IOT,FinTech, شامل ہیں ،کو تیزی سے اپنانے اور پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ میں عام
لوگوں کے زیر استعمال تصریحات میں اضافہ کی خواہش مند ہے ۔حکومت ان تصریحات کے تحت
بنائی گئی ڈیوائسز اور متعلقہ سروسز کی فراہمی کے لئے قابلیت اور استعداد میں اضافے کے مواقع
پیدا کرے اور خریداری کے عمل میں ملکیتی اور عام لوگوں کے زیر استعمال تصریحات کے تحت
بنائی گئی مصنوعات کو یکساں اہمیت دے اور اس ضمن میں مزیدتحقیق اور ترقی کو فروغ دے ۔
پاکستان میں لائبریری کا نظام ان تصریحات کے تحت چلایا جا رہا ہے ۔آئندہ چند برسوں میں عام
لوگوں کے زیر استعمال یہ تصریحات انڑنیٹ کے پھیلاؤ اور ٹیکنالوجی میں اضافہ کے شانہ بشانہ ہوں
گی۔


Warning: Use of undefined constant OD_ENV - assumed 'OD_ENV' (this will throw an Error in a future version of PHP) in /home/isocbsig/public_html/wp-content/themes/isoc2017-wp-master/footer.php on line 11